In the Name of Allah, The Most Gracious, Ever Merciful.

Love for All, Hatred for None.

Browse Al Islam

Back Quran Search Home

The Holy Quran : Chapter 27: Al-Naml النَّمل

English Translation by Maulvi Sher Ali (ra)      اردو ترجمہ [حضرت مرزا طاہر احمد، خلیفۃ المسیح الرابع]
Get flash to see this player.

[27:31] “It is from Solomon, and it is: ‘In the name of Allah, the Gracious, the Merciful;
[27:31] یقیناً وہ سلیمان کی طرف سے ہے اور وہ یہ ہے: اللہ کے نام کے ساتھ جو بے انتہا رحم کرنے والا، بِن مانگے دینے والا (ا ور) بار بار رحم کرنے والا ہے۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:32] ‘Behave not proudly towards me, but come to me in submission.’”
[27:32] (پیغام یہ ہے) کہ تم میرے خلاف سرکشی نہ کرو اور میرے پاس فرمانبردار ہو کر چلے آؤ۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:33] She said, ‘Ye chiefs, advise me in the matter that is before me. I never decide any matter until you are present with me and give me your advice.’
[27:33] اس نے کہا اے سردارو! مجھے میرے معاملہ میں مشورہ دو۔ میں کوئی اہم فیصلہ نہیں کرتی مگر اس وقت جب تم میرے پاس موجود ہو۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:34] They replied, ‘We possess power and we possess great prowess in war, but it is for thee to command; therefore consider thou what thou wilt command.’
[27:34] انہوں نے کہا ہم بڑے طاقتور لوگ ہیں اور سخت جنگجو ہیں۔ دراصل فیصلہ کرنا تیرا ہی کام ہے۔ پس تُو خود ہی غور کر لے کہ تجھے (ہمیں) کیا حکم دینا چاہیے۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:35] She said, ‘Surely, kings, when they enter a country, despoil it, and turn the highest of its people into the lowest. And thus will they do.
[27:35] اس نے کہا یقیناً جب بادشاہ کسی بستی میں داخل ہوتے ہیں تو اس میں فساد برپا کر دیتے ہیں اور اس کے باشندوں میں سے معزز لوگوں کو ذلیل کر دیتے ہیں اور وہ اسی طرح کیا کرتے ہیں۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:36] ‘But I am going to send them a present and wait to see what answer the envoys bring back.’
[27:36] اور ضرور میں ان کی طرف ایک تحفہ بھیجنے لگی ہوں۔ پھر میں دیکھوں گی کہ ایلچی کیا جواب لاتے ہیں۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:37] So when the Queens ambassador came to Solomon, he said, ‘Do you mean to help me with your wealth? But that which Allah has given me is better than that which He has given you. Nay, but you rejoice in your gift.
[27:37] پس جب وہ (وفد) سلیمان کے پاس آیا تو اس نے کہا کیا تم مجھے مال کے ذریعہ مدد دینا چاہتے ہو جبکہ اللہ نے جو مجھے عطا کیا ہے اُس سے بہتر ہے جو تمہیں عطا کیا ہے لیکن تم اپنے تحفے پر ہی اِترا رہے ہو۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:38] ‘Go back to them, for we shall surely come to them with hosts against which they will have no power, and we shall drive them out from there disgraced, and they will be humbled.’
[27:38] اُن کی طرف لوٹ جا۔ پس ہم ضرور اُن کے پاس ایسے لشکروں کے ساتھ آئیں گے جن کا کوئی مقابلہ ان کےلئے ممکن نہیں اور ہم انہیں ضرور اس (بستی) سے ذلیل بناتے ہوئے نکال دیں گے اور وہ بے بس ہوں گے۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:39] He said, ‘O nobles, which of you will bring me a throne for her before they come to me, submitting?’
[27:39] اس نے کہا اے سردارو! کون ہے تم میں سے جو اس کا تخت میرے پاس لے آئے اس سے پہلے کہ وہ میرے پاس فرمانبردار ہو کر پہنچیں؟
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

[27:40] Said a stalwart from among the Jinn: ‘I will bring it to thee before thou rise from thy camp; and indeed I possess power therefore and I am trustworthy.’
[27:40] جنوں میں سے عِفریت نے کہا میں اسے تیرے پاس لے آؤں گا پیشتر اس سے کہ تُو اپنے مقام سے پڑاؤ اٹھا لے اور یقیناً میں اس (کام) پر بہت قوی (اور) قابل اعتماد ہوں۔
Read: Short English Commentary | Detailed English Commentary | Urdu Tafaseer اردو تفاسیر

 Previous Page
 
 
 Next Page