In the Name of Allah, The Most Gracious, Ever Merciful.

Love for All, Hatred for None.

Al Islam Home Page > Urdu Home Page > Al Islam Urdu Library
اردو » الاسلام اردو لائبریری » خطبات » حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ » 2008ء »

اللہ تعالیٰ کی طرف سے جماعت احمدیہ پر فضلوں کی بارش ، ہمیشہ برسنے والی بارش ہے

مسجد مبارک فرانس و مسجدخدیجہ برلن کے افتتاح اورپارلیمنٹ ہاﺅس برطانیہ میں خلافت جوبلی ریسپشن کا تذکرہ، شکر گزاری کے جذبات کے ساتھ اللہ تعالیٰ کے فضلوں کے منادی بنیں اور ترقیات کی منازل طے کرتے چلے جائیں، سیدنا حضرت خلیفة المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز کے خطبہ جمعہ فرمودہ 24 اکتوبر 2008ءبمقام بیت الفتوح مورڈن لندن کاخلاصہ

سیدنا حضرت خلیفۃ المسیح الخامس ایدہ اللہ تعالیٰ بنصرہ العزیز نے مورخہ 24اکتوبر 2008ءکو بیت الفتوح مورڈن لندن میں خطبہ جمعہ ارشاد فرمایا۔ حضور انور کا یہ خطبہ جمعہ متعدد زبانوں میں تراجم کے ساتھ ایم ٹی اے انٹرنیشنل پر براہ راست ٹیلی کاسٹ کیا گیا۔

حضور انور نے فرمایا کہ حضرت مسیح موعود پر اللہ تعالیٰ نے اپنے فضلوں کی ایسی بارش برسائی جو الٰہی وعدوں کے مطابق ہمیشہ برسنے والی بارش ہے۔ آج آپ کی وفات کے سو سال گزرنے کے بعد بھی اللہ تعالیٰ اپنے فضلوں سے ہر آن آپ کی جماعت کو نواز رہا ہے اور انشاءاللہ ہمیشہ نوازتا رہے گا ہاں راستے کی روکیں آتی رہیں گی لیکن اللہ تعالیٰ انہیں اپنے فضل سے دور بھی فرماتا رہے گا۔ آپ فرماتے ہیں کہ وہ اس سلسلے کو پوری ترقی دے گا کچھ میرے ہاتھ سے اور کچھ میرے بعد۔حضور انور نے فرمایا کہ خداتعالیٰ نے نظام خلافت آپ کی جماعت میں قائم فرمایا ہے تاکہ جو کام آپ کے سپرد کیا گیا تھا اس کی تکمیل خدا تعالیٰ فرمائے ۔ شکر گزاری کے جذبات کے ساتھ اللہ تعالیٰ کے فضلوں کے منادی بنیں اور ترقیات کی منازل طے کرتے چلے جائیں ۔

حضور انور نے اپنے حالیہ دورہ یورپ کے دوران اللہ تعالیٰ کے فضلوں کی بارش اور حضرت مسیح موعودکی جماعت کو جو حقیقی دین حق کا پیغام پہنچانے کی توفیق دی اس کا ذکر کرتے ہوئے فرمایا کہ فرانس اور جرمنی میں بیوت الذکر کے افتتاح ہوئے، ہالینڈ کا جلسہ اور بیلجیئم میں انصاراللہ کا اجتماع تھا ، ان سب میں شمولیت کی توفیق ملی ۔ حضور انور نے فرانس میں ان میئر صاحب کا بھی ذکر فرمایا جنہوں نے شروع میں مسجد کی تعمیر کی مخالفت کی مگر پھر جب خدا تعالیٰ نے ان کے دل کو بدلا تو انہی میئر صاحب نے نہ صرف مسجد بنانے کی اجازت دی بلکہ جماعت کے بارے میں نیک تاثرات کا اظہار کرتے ہوئے اخباری نمائندوں کو بتایا کہ یہ جماعت ایک امن پسند اور بہت قابل احترام اسلام کو پیش کرتی ہے۔ محبت سب کیلئے نفرت کسی سے نہیں ان کا ماٹو ہے۔

حضور انو رنے فرمایا کہ پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا نے اس پروگرام کی کوریج کی اور دنیاکو بتایا کہ یہ لوگ مسجد کے ذریعے احمدیت اور اسلام کی تعلیم اور اس کا پیغام دنیا تک پہنچا رہے ہیں ۔حضور انور نے فرمایا گویا اس مسجد نے دنیا کے کئی ممالک میں جماعت کا تعارف کروا دیااور دعوت اللہ کے نئے راستے کھلے۔ اللہ تعالیٰ اس کے نیک نتائج پیدا فرمائے یہ سب اس خدا کے کام ہیں جو قت آنے پر اپنے قرب کے نظارے دکھاتا ہے۔

حضور انور نے فرمایا کہ فرانس کے بعد ہالینڈ کا جلسہ تھا یہاں جوبلی جلسے کے حوالے سے بعض اخباری نمائندے بھی آئے ہوئے تھے جنہوں نے اس کی کوریج کی اور جماعت کا تعارف کافی اچھے طبقہ میں پھیل گیا۔ ہالینڈ کے بعد جرمنی کے لئے روانگی ہوئی ۔ حضور انور نے برلن میں مسجد خدیجہ کے افتتاح، علاقے میں اس کی مخالفت اور پھر بعد میں ہونے والے خدا تعالیٰ کے فضل کے نزول کا ذکر کیا اور فرمایا کہ اللہ تعالیٰ کے فضل سے مسجد خدیجہ کے افتتاح کے موقع کو بھی دنیا بھر کے پرنٹ اور الیکٹرانک میڈیا نے کور کیا۔ برلن کے ایک مشہور اخبار نے اس موقع کی خبر شائع کی جس میں وزیر اعلیٰ برلن نے احمدیوں کو مسجد کی مبارکباددی ہے اور کہا ہے کہ یہ مسجد برداشت اور بردباری کی علامت ہے ۔

حضور انور نے فرمایا کہ برلن مسجد کے افتتاح کے بعد ہم بیلجیئم آئے وہاں انصاراللہ کا اجتماع تھا۔ اللہ تعالیٰ کے فضل سے وہاں بھی ان کو کہنے کا کچھ موقع مل گیااور وہاں سے پھر اسی دن شام کو ان کے اجتماع کے بعد ہماری یہاں لندن واپسی ہوئی۔ اس جلد واپسی کی وجہ یہ تھی کہ بیت الفضل کے علاقے کی ایم پی اے نے پارلیمنٹ ہاﺅس میں خلافت جوبلی کے حوالے سے ایک ریسپشن کا اہتمام کیا ہوا تھا جس میں کافی تعداد میں ایم پی ایز اور پارلیمنیٹر ینز وغیرہ شامل ہوئے تھے۔ اس میں بھی حضرت مسیح موعود کی بعثت کا مقصد ، خلافت کا کیا کام ہے ، اسلام کی امن پسند تعلیم او رآج کل دنیا میں کس طرح امن قائم ہو سکتا ہے او ربڑی طاقتوں کی کیا ذمہ واریاں ہیں اور آجکل کے اقتصادی بحران کے بارے میں قرآن کریم کی روشنی میں کچھ وقت ان کو کہنے کا موقع ملا جس کا نتیجہ یہ ہوا کہ شرکاءنے اس کا اچھا اثر لیا اور اس کا اظہاربھی انہوں نے کیا۔

حضرت مسیح موعود فرماتے ہیں کہ خدا تعالیٰ نے مجھے بار بار خبر دی ہے کہ وہ مجھے بہت عظمت دے گا اور میری محبت دلوں میں بٹھائے گا اور میرے سلسلے کو تمام زمین پر پھیلائے گا اور ہر ایک قوم اس چشمے سے پانی پیئے گی اور خدا نے مجھے مخاطب کر کے فرمایا کہ میں تجھے برکت پر برکت دوں گا یہاں تک کہ بادشاہ تیرے کپڑوں سے برکت ڈھونڈیں گے ۔ حضور انور نے فرمایا کہ اللہ تعالیٰ ہمیں حقیقی احمدی بنتے ہوئے مزید ترقیات دیکھنے کی توفیق عطا فرمائے ۔