بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِِ

Al Islam

The Official Website of the Ahmadiyya Muslim Community
Muslims who believe in the Messiah,
Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani(as)Muslims who believe in the Messiah, Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani (as), Love for All, Hatred for None.

CHAPTER 61

As-Saff

(Revealed after Hijrah)

Title, Date of Revelation, and Context

This Surah takes its title from v. 5 which enjoins Muslims to fight in the cause of Allah in solid ranks ( صفاً), "as if they were a strong, cemented structure." The Surah was revealed at Medina, probably in the third or fourth year of Hijrah, after the Battle of Uhud, as v. 5 seems to possess an implied reference to the lack of discipline or unquestioning obedience to the Holy Prophet, of which some of the Muslims were guilty in that battle. The preceding two Surahs had dealt with the subject of war against disbelievers, and with social and political problems arising out of it. The Surah under comment emphasizes the importance of giving unqualified and unquestioning obedience to the leader, and of presenting, under his guidance, a solid, compact and united front to disbelievers.

Subject Matter

The Surah opens with the glorification of God’s Wisdom and Might, and proceeds to admonish believers that when they glorify God and extol His holiness with their tongues, they should also glorify Him with their actions, thus making their actions harmonize with their verbal declarations. So, when they are called upon to fight in the cause of truth, they should present a firm and solid front to disbelievers, and should give unqualified obedience to their Leader.

The Surah then makes a brief reference to the misbehaviour of the followers of Moses who, by disobeying and defying him, caused him much vexation and mental anguish, and, by implication, warns Muslims never to behave like them. Next, mention is made of the prophecy of Jesus about the advent of the Holy Prophet, followed by a firm declaration that all the attempts of the votaries of darkness to extinguish the Light of Allah would come to nought. The Light will continue to shine in all its glory and effulgence and Islam will prevail over all religions. But before this comes to pass, the followers of Islam shall have to "strive with their wealth and persons in the cause of Allah."Only then will they deserve to be blessed with God’s pleasure and material glory—"with Gardens through which streams flow." The Surah closes with exhorting Muslims to help God’s cause, as did the disciples of Jesus by undergoing all manner of sacrifice and suffering for it.

61. الصّف

یہ سورت مدینہ میں نازل ہوئی اور بسم اللہ سمیت اس کی پندرہ آیات ہیں۔

 پچھلی سورت کے آخر پر جس عہدِ بیعت کا ذکر ہے اس میں صرف مومن عورتوں کی ذمہ داریوں کا ذکر ہی نہیں ہے بلکہ مومن مرد بھی عہدِ بیعت کے ذریعہ اسی قسم کی روحانی بیماریوں سے اجتناب کا عہد کرتے ہیں۔ پس دونوں کو سورۃ الصّفّ کے آغاز میں یہ تاکید ہے کہ اپنے عہدِ بیعت میں منافق نہ ہوجانا اور یہ نہ ہو کہ دوسروں کو تو نصیحت کرتے رہو اور خود اس پر کاربندنہ ہو۔ اگر تم اخلاص کے ساتھ عہد بیعت پر قائم رہوگے تو اللہ تعالیٰ تمہارے دل ایک دوسرے سے اس طرح پیوستہ کردے گا کہ تمہیں ایک سیسہ پلائی ہوئی دیوار کی طرح دشمن کے مقابل پر کھڑا کردے گا۔ 

اسی سورت میں حضرت اقدس محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم کے متعلق حضرت عیسیٰ علیہ الصلوٰۃ والسلام کی پیشگوئی کا بھی ذکر ہے جس میں حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ و سلم کے دوسرے نام یعنی احمدؐ کا ذکر فرمایا جو جمالی شان کا مظہر ہے۔ احمدؐ کے تعلق میں اس کے بعد جو ذکر ملتا ہے اس سے صاف ثابت ہے کہ آنحضور صلی اللہ علیہ و سلم کا ایک جمالی مظہر آخَرِین کے زمانہ میں پیدا ہوگا۔ اس وقت جو اسلام کی جمالی رنگ کی خدمت کی اس کو اور اس کے متبعین کو توفیق ملے گی وہ نقشہ صاف ظاہر کر رہا ہے کہ یہ ایک مستقبل کی پیشگوئی ہے۔ 

چونکہ اس سورت کے آخر پر حضرت عیسیٰ علیہ الصلوٰۃ والسلام اور آپؑ کی پیشگوئیوں کا ذکر چل رہا ہے اس لئے جس طرح آپؑ نے یہ اعلان کیا تھا کہ کون ہے جو اللہ کے لئے آپؑ کا مددگار بنے گا، اُسی طرح لازم ہے کہ دَورِ آخَرِین میں جب دوبارہ یہ اعلان ہو تو تمام وہ مسلمان جو سچے دل سے ان پیشگوئیوں پر ایمان لائے ہیں وہ بھی یہ اعلان کرتے ہوئے مسیحِ محمدیؐ کے جھنڈے تلے جمع ہوجائیں کہ ہم ہر طور سے آنحضرت صلی اللہ علیہ و سلم کے دین کی نصرت کے لئے مسیحِ محمدیؐ کے خدمتِ دین کے کاموں میں اس کے مددگار ہوں گے۔ 


[61:1]   
English
In the name of Allah, the Gracious, the Merciful.
اُردو
اللہ کے نام کے ساتھ جو بے انتہا رحم کرنے والا، بِن مانگے دینے والا (اور) بار بار رحم کرنے والا ہے۔

[61:2]   
English
Whatever is in the heavens and whatever is in the earth glorifies Allah; and He is the Mighty, the Wise.
اُردو
اللہ ہی کی تسبیح کرتا ہے جو آسمانوں میں ہے اور جو زمین میں ہے اور وہ کامل غلبہ والا (اور) صاحبِ حکمت ہے۔

[61:3]   
English
O ye who believe! why do you say what you do not do?
اُردو
اے وہ لوگو جو ایمان لائے ہو! تم کیوں وہ کہتے ہو جو کرتے نہیں۔

[61:4]   
English
Most hateful is it in the sight of Allah that you say what you do not do.
اُردو
اللہ کے نزدیک یہ بہت بڑا گناہ ہے کہ تم وہ کہو جو تم کرتے نہیں۔

[61:5]   
English
Verily, Allah loves those who fight in His cause arrayed in solid ranks, as though they were a strong structure cemented with molten lead.
اُردو
یقیناً اللہ ان لوگوں سے محبت کرتا ہے جو اس کی راہ میں صف باندھ کر قتال کرتے ہیں گویا وہ ایک سیسہ پلائی ہوئی دیوار ہیں۔

[61:6]   
English
And remember when Moses said to his people, ‘O my people, why do you vex and slander me and you know that I am Allah’s Messenger unto you?’ So when they deviated from the right course, Allah caused their hearts to deviate, for Allah guides not the rebellious people.
اُردو
اور (یاد کرو) جب موسیٰ نے اپنی قوم سے کہا اے میری قوم! تم مجھے کیوں اذیّت دیتے ہو؟ حالانکہ تم جانتے ہو کہ میں تمہاری طرف اللہ کا رسول ہوں۔ پس جب وہ ٹیڑھے ہوگئے تو اللہ نے اُن کے دلوں کو ٹیڑھا کردیا اور اللہ فاسق قوم کو ہدایت نہیں دیتا۔

[61:7]   
English
And remember when Jesus, son of Mary, said, ‘O children of Israel, surely I am Allah’s Messenger unto you, fulfilling that which is before me of the Torah, and giving glad tidings of a Messenger who will come after me. His name will be Ahmad.’ And when he came to them with clear proofs, they said, ‘This is clear enchantment.’
اُردو
اور (یاد کرو) جب عیسیٰ بن مریم نے کہا اے بنی اسرائیل! یقیناً میں تمہاری طرف اللہ کا رسول ہوں۔ اس کی تصدیق کرتے ہوئے آیا ہوں جو تورات میں سے میرے سامنے ہے اور ایک عظیم رسول کی خوشخبری دیتے ہوئے جو میرے بعد آئے گا جس کا نام احمد ہوگا۔ پس جب وہ کھلے نشانوں کے ساتھ ان کے پاس آیا تو انہوں نے کہا یہ تو ایک کھلا کھلا جادو ہے۔

[61:8]   
English
But who could do greater wrong than one who forges the lie against Allah while he is called to Islam? Allah guides not the wrongdoing people.
اُردو
اور اس سے زیادہ ظالم کون ہوگا جو اللہ پر جُھوٹ گھڑے حالانکہ اُسے اسلام کی طرف بلایا جا رہا ہو۔ اور اللہ ظالم قوم کو ہدایت نہیں دیتا۔

[61:9]   
English
They desire to extinguish the light of Allah with the breath of their mouths, but Allah will perfect His light, even if the disbelievers hate it.
اُردو
وہ چاہتے ہیں کہ وہ اپنے منہ کی پھونکوں سے اللہ کے نور کو بجھادیں حالانکہ اللہ ہر حال میں اپنا نور پورا کرنے والا ہے خواہ کافر ناپسند کریں۔

[61:10]   
English
He it is Who has sent His Messenger with the guidance and the Religion of truth, that He may cause it to prevail over all religions, even if those who associate partners with God hate it.
اُردو
وہی ہے جس نے اپنے رسول کو ہدایت اور دین حق کے ساتھ بھیجا تاکہ وہ اُسے دین (کے ہر شعبہ) پر کلیّۃً غالب کردے خواہ مشرک برا منائیں۔