بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِِ

Al Islam

The Official Website of the Ahmadiyya Muslim Community
Muslims who believe in the Messiah,
Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani(as)Muslims who believe in the Messiah, Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani (as), Love for All, Hatred for None.

CHAPTER 73

Al-Muzzammil

(Revealed before Hijrah)

Introductory Remarks

A consensus of scholarly opinion assigns the revelation of this Surah to the earliest period of the Call; some consider it to be the third chapter to be revealed. It receives its title from the opening verse.

In the preceding Surah (Al-Jinn) it was stated that angels descend upon Divine Messengers to guard the Word of God revealed to them from being distorted or tampered with. In the present Surah the Holy Prophet is enjoined to devote a part of the night to Prayer and the remembrance of God so that angels may descend upon him to help him against the evil plots and machinations of his enemies.

Like all Meccan Surahs, this Surah also deals mainly with the divine mission of the Holy Prophet and with the truth of the Quranic revelation. It foretells, in brief but in very graceful words, the eventual triumph of the Holy Prophet and adduces the fulfilment of the prophecy as an argument in support of Life after death and the Resurrection. Particular emphasis has been laid on Prayer and the remembrance of God which was a most effective means to draw Divine help and succour in preparation for the mighty task that lay ahead of the Prophet.

73. المزمل

یہ سورت ابتدائی مکی دور میں نازل ہوئی تھی اور بسم اللہ سمیت اس کی اکیس آیات ہیں۔ 

اس سے پہلی سورت میں آنحضرت صلی اللہ علیہ و سلم کی عبادت کی جو کیفیت بیان کی گئی تھی اس کی تفصیل اس سورت کے آغاز ہی میں ملتی ہے جو مختصراً یہ ہے کہ آپؐ راتوں کو اٹھتے تھے۔ اس کا اکثر حصہ گریہ و زاری میں صرف کیا کرتے تھے۔ اپنی نفسانی خواہشات کو روندنے کا اس سے بہتر اور کوئی طریق نہیں کہ انسان رات کو اُٹھ کر عبادت کے ذریعہ اپنی ان خواہشات کو کچل ڈالے۔ 

اسی سورت میں ایک دفعہ پھر حضرت موسیٰ علیہ الصلوٰۃ والسلام کے ساتھ آپؐ کی مماثلت بیان فرمائی گئی ہے کہ آپؐ بھی ایک شارع رسول ہیں اور ایک صاحبِ جلال رسول ہیں۔ پس آنحضرت صلی اللہ علیہ و سلم کے مخاطبین کو تنبیہ کی جارہی ہے کہ موسیٰ علیہ السلام سے بڑھ کر صاحبِ جلال رسول ظاہر ہوچکا ہے۔ اس کی مخالفت کے نتیجہ میں سوائے اس کے کہ تم ہلاکتوں میں غرق کردیئے جاؤ کوئی نتیجہ نہیں نکلے گا جیسا کہ موسٰیؑ کے مقابل پر ایک بہت بڑے جابر نے آپؑ کے پیغام کو ردّ کرنے کی جرأت کی تھی اور ہلاک کردیا گیا تھا۔ 


[73:1]   
English
In the name of Allah, the Gracious, the Merciful.
اُردو
اللہ کے نام کے ساتھ جو بے انتہا رحم کرنے والا، بِن مانگے دینے والا (اور) بار بار رحم کرنے والا ہے۔

[73:2]   
English
O thou who art bearing a heavy responsibility,
اُردو
اے اچھی طرح چادر میں لپٹنے والے!

[73:3]   
English
Stand up in Prayer at night except a small portion thereof —
اُردو
رات کو قیام کیا کر مگر تھوڑا۔

[73:4]   
English
Half of it, or make it a little less than that
اُردو
اس کا نصف یا اس میں سے کچھ تھوڑا سا کم کر دے۔

[73:5]   
English
Or make it a little more than that — and recite the Qur’an slowly and thoughtfully.
اُردو
یا اس پر (کچھ) زیادہ کردے اور قرآن کو خوب نکھار کر پڑھا کر۔

[73:6]   
English
Verily, We are charging thee with a weighty Word.
اُردو
یقیناً ہم تجھ پر ایک بھاری فرمان اُتاریں گے۔

[73:7]   
English
Verily, getting up at night is the most potent means of subduing the self and most effective in respect of words of prayer.
اُردو
رات کا اُٹھنا یقیناً (نفس کو) پاؤں تلے کچلنے کے لئے زیادہ شدید اور قول کے لحاظ سے زیادہ مضبوط ہے۔

[73:8]   
English
Thou hast indeed, during the day, a long chain of engagements.
اُردو
یقیناً تیرے لئے دن کو بہت لمبا کام ہوتا ہے۔

[73:9]   
English
So remember the name of thy Lord, and devote thyself to Him with full devotion.
اُردو
پس اپنے ربّ کے نام کا ذکر کر اور اس کی طرف پوری طرح منقطع ہوتا ہؤا الگ ہوجا۔

[73:10]   
English
He is the Lord of the East and the West; there is no God but He; so take Him as thy Guardian.
اُردو
وہ مشرق اور مغرب کا ربّ ہے۔ اُس کے سوا اور کوئی معبود نہیں۔ پس اُسے بطور کارساز اپنالے۔