بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِِ

Al Islam

The Official Website of the Ahmadiyya Muslim Community
Muslims who believe in the Messiah,
Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani(as)Muslims who believe in the Messiah, Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani (as), Love for All, Hatred for None.

CHAPTER 85

Al-Buruj

(Revealed before Hijrah)

Introductory Remarks

This Surah was revealed at Mecca in the first few years of the Call. It takes its title from the word Buruj in the first verse. The connection of this Surah with its predecessor—Surah Inshiqaq—is indicated by the fact that in the latter Surahthe moon of the 13th night was invoked as a witness, and in the present Surah "mansions of stars and the Promised Day" have been invoked to serve the same purpose. The Buruj or mansions of stars may represent the twelve Divine Reformers (Mujaddids), each of whom was raised at the beginning of a century of Hijrah, and the Promised Day stands for the 14thCentury of Hijrah when the Muslims stood in great need of a Divine Reformer, their fortunes having sunk to the lowest ebb, and thus, befittingly, the greatest of these Reformers—the Promised Messiah—was raised to restore to them their spiritual glory. This Surah presents the subject matter of the preceding Surah in a different form and points to the severe persecution to which the followers of the Promised Messiah would be subjected, ending appropriately on the note that because in the time of the Promised Messiah the integrity of the Quran as God’s revealed Word would be assailed from all quarters, particularly by Christian writers, the Promised Messiah would devote all his energies and his great God-given gifts to rebut these attacks and to prove the infallibility and inviolability of the Quran.

85. البروج

یہ سورت مکی ہے اور بسم اللہ سمیت اس کی تئیس آیات ہیں۔

 اس سورت کا گزشتہ سورت سے تعلق یہ ہے کہ اُس میں ازسرِنو اسلام کے چاند کے طلوع ہونے کا ذکر تھا۔ یہ واقعہ کب رونما ہوگا اور اس کا مقصد کیا ہوگا؟ یاد رہے کہ آسمان کے بارہ برج ہیں تو گویا بارہ سو سال کے بعد اس پیشگوئی کے ظہور کا وقت آئے گا اور جس طرح چاند سورج کی گواہی دیتا ہے اسی طرح ایک آنے والا شاہد اپنے عظیم مشہود یعنی حضرت محمد رسول اللہ صلی اللہ علیہ وسلم کی گواہی دے گا۔ اور اس گواہی میں اس کے سچے متبعین بھی شامل ہوں گے۔ ان کا اس کے سوا کوئی جرم نہیں ہوگا کہ وہ آنے والے پر ایمان لے آئے لیکن اس کے باوجود اُن کو انتہائی ظالمانہ سزائیں دی جائیں گی یہاں تک کہ آگ میں جلایا جائے گا اور دیکھنے والے آرام سے اس کا تماشہ دیکھیں گے۔ یہ تمام واقعات مِن و عَن پاکستان میں مخلص احمدیوں کے خلاف مسلسل ہورہے ہیں۔

 اس سورت کے آخر پر اس بات کی بشدت تنبیہ فرمائی گئی ہے کہ پہلی قوموں نے بھی جب اس قسم کے مظالم کئے تھے تو ان کے مظالم نے انہیں گھیر لیا تھا۔ پس اُس قرآن کی قَسم ہے جو لوحِ محفوظ میں ہے کہ تم بھی اپنے جرموں کی سزا پاؤ گے۔ 


[85:1]   
English
In the name of Allah, the Gracious, the Merciful.
اُردو
اللہ کے نام کے ساتھ جو بے انتہا رحم کرنے والا، بِن مانگے دینے والا (اور) بار بار رحم کرنے والا ہے۔

[85:2]   
English
By the heaven having mansions of stars,
اُردو
قسم ہے برجوں والے آسمان کی۔

[85:3]   
English
And by the Promised Day,
اُردو
اور موعود دن کی۔

[85:4]   
English
And by the Witness and that about whom witness has been borne,
اُردو
اور ایک گواہی دینے والے کی اور اُس کی جس کی گواہی دی جائے گی۔

[85:5]   
English
Cursed be the Fellows of the Trench —
اُردو
ہلاک کردیئے جائیں گے کھائیوں والے۔

[85:6]   
English
The fire fed with fuel —
اُردو
یعنی اُس آگ والے جو بہت ایندھن والی ہے۔

[85:7]   
English
As they sat by it,
اُردو
جب وہ اُس کے گرد بیٹھے ہوں گے۔

[85:8]   
English
And they witnessed what they did to the believers.
اُردو
اور وہ اُس پر گواہ ہوں گے جو وہ مومنوں سے کریں گے۔

[85:9]   
English
And they hated them not but because they believed in Allah, the Almighty, the Praiseworthy,
اُردو
اور وہ اُن سے پرخاش نہیں رکھتے مگر اس بنا پر کہ وہ اللہ، کامل غلبہ رکھنے والے، صاحبِ حمد پر ایمان لے آئے۔

[85:10]   
English
To Whom belongs the kingdom of the heavens and the earth; and Allah is Witness over all things.
اُردو
جس کی آسمانوں اور زمین کی بادشاہی ہے اور اللہ ہر چیز پر گواہ ہے۔