بِسۡمِ اللّٰہِ الرَّحۡمٰنِ الرَّحِیۡمِِ

Al Islam

The Official Website of the Ahmadiyya Muslim Community
Muslims who believe in the Messiah,
Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani(as)Muslims who believe in the Messiah, Hazrat Mirza Ghulam Ahmad Qadiani (as), Love for All, Hatred for None.

CHAPTER 92

Al-Lail

(Revealed before Hijrah)

General Remarks

Prominent Muslim scholars, including two distinguished Companions of the Holy Prophet—‘Abdullah bin ‘Abbas and ‘Abdullah bin Zubair—are of the view that the Surah was revealed very early at Mecca. William Muir also agrees with this opinion. The Surah takes its title from the first word of the opening verse.

The Surah possesses very close resemblance with some previous chapters, especially with Al-Fajr and Al-Balad. In the immediately preceding Surah, Ash-Shams, it was hinted that the supreme object of the building of the Ka‘bah, which is the principal theme of Surah Al-Balad, could not have been achieved without a great Divine Messenger—the soul par excellence. In the present Surah we are told that when an ideal teacher, as the Holy Prophet, is blessed with ideal disciples like his Companions, advance of the cause of truth is doubly accelerated. The Surah also mentions some of the prominent moral qualities that distinguished the Companions of the Holy Prophet. In contrast, two glaring bad qualities that lead to the undoing of a man are also mentioned.

92. الّیل

یہ سورت مکی ہے اور بسم اللہ سمیت اس کی بائیس آیات ہیں۔ 

سورۃ الشمس کے بعد سورۃ الیل آتی ہے جیسے دن کے بعد رات آیا کرتی ہے اور یہ کوئی دنیاوی رات نہیں بلکہ اس ساری سورت میں رات کے روحانی پہلو احسن طریق پر پیش فرمائے گئے ہیں اور ساتھ ہی یہ خوشخبری بھی ہے کہ جب رات آئے گی تو پھر دن بھی ضرور چڑھے گا۔ فرمایا جیسے دن اور رات کے اثرات الگ الگ ہوتے ہیں اسی طرح انسان کی کوششیں بھی یا رات کی طرح تاریک ہوتی ہیں یا دن کی طرح روشن۔ ہر انسان کو اس کے اپنے اعمال اور نظریات کے مطابق جزا دی جاتی ہے۔ پس وہ لوگ جو اللہ کا تقویٰ اختیار کرکے اس کی راہ میں اور غریبوں کی بہبود میں خرچ کرتے ہیں اور اچھی بات کی، جب وہ ان کے پاس پہنچے تصدیق کرتے ہیں، تو اللہ تعالیٰ ان کی راہیں آسان فرمادے گا۔ اس کے مقابل پر وہ شخص جو کنجوسی سے کام لے اور اس سے بے پروا ہو کہ اس کے کیا نتائج نکلیں گے اور بھلائی کی بات جب اس کے پاس پہنچے تو اس کی تکذیب کردے تو ہم اس کا سفر مشکل بنادیں گے۔ 

پس آخر پر بداعمال شخص کو جس کی صفات اوپر گزری ہیں بھڑکتی ہوئی آگ سے ڈرایا جارہا ہے جب وہ اس میں داخل ہوگا اور وہ شخص اس آگ سے ضرور بچایا جائے گا جس نے اپنا مال نیک کاموں پر خرچ کیا اور تقویٰ اختیار کیا۔ 


[92:1]   
English
In the name of Allah, the Gracious, the Merciful.
اُردو
اللہ کے نام کے ساتھ جو بے انتہا رحم کرنے والا، بِن مانگے دینے والا (اور) بار بار رحم کرنے والا ہے۔

[92:2]   
English
By the night when it covers up!
اُردو
قسم ہے رات کی جب وہ ڈھانپ لے۔

[92:3]   
English
And by the day when it brightens up,
اُردو
اور دن کی جب وہ روشن ہوجائے۔

[92:4]   
English
And by the creating of the male and the female,
اُردو
اور اس کی جو اُس نے نر اور مادہ پیدا کئے۔

[92:5]   
English
Surely, your strivings are diverse.
اُردو
تمہاری کوشش یقیناً الگ الگ ہے۔

[92:6]   
English
Then as for him who gives and is righteous,
اُردو
پس وہ جس نے (راہِ حق میں) دیا اور تقویٰ اختیار کیا۔

[92:7]   
English
And testifies to the truth of what is right,
اُردو
اور بہترین نیکی کی تصدیق کی۔

[92:8]   
English
We will facilitate for him every facility.
اُردو
تو ہم اسے ضرور کشادگی عطا کریں گے۔

[92:9]   
English
But as for him who is niggardly and is disdainfully indifferent,
اُردو
اور جہاں تک اس کا تعلق ہے جس نے بخل کیا اور بے پروائی کی۔

[92:10]   
English
And rejects what is right,
اُردو
اور بہترین نیکی کی تکذیب کی۔